بلاگ/ کالم

یہ ملک آخر کون چلا رہا ہے بھئی؟

تحریر: عرفان حسین اگر جمہوریت میں ہارنے والوں کی رائے یا ان کا خیال شامل ہونا لازمی ہوتا تو پھر پاکستان کسی بھی طور پر ایک جمہوری ملک نہیں کہلایا جاسکتا تھا۔ یہ بات درست ہے کہ ہمارے ہاں انتخابات کا انعقاد ہوتا ہے، ایک ایسی شاندار عمارت بھی موجود ہے جسے اسمبلی کہا جاتا ہے، اور جمہوریت کے تقاضوں ...

Read More »

ماؤں کے نام پر جنگ میں ہتھیار نہیں ڈالے جاتے

تحریر: وجاہت مسعود اسلام آباد کی شام آہستگی سے رات میں ڈھل رہی تھی۔ آتش دان سے آتی حرارت کی لہریں محبت کی سرگوشی کی طرح نظر آئے بغیر کمرے کی دیواروں سے لپٹ رہی تھیں۔ تین دوست دن بھر کی مشقت کو ملاقات کی سرخوشی میں بھگو رہے تھے۔ بہت برس گزرے، ان تینوں نے معمولی وقفے سے ایک ...

Read More »

فرہنگِ آصفیہ سے رجوع

تحریر: امتیاز عالم ہمارے یار فیصل واوڈا نے اپوزیشن کو جوتا کیا دکھایا کہ وہ جوتیاں بغل میں دبا بھاگ نکلی۔ واوڈا نے اپوزیشن کو جوتی کیا پہنائی کہ سیاستدان باہم جوتی پیزار ہو گئے۔ کسی میں جوتا دکھانے یا جوتے کی نوک پہ رکھنے کی جرأت نہ ہوئی۔ اب ووٹ کو عزت دو والے جوتیاں سیدھی کرتے پھریں،جمہوری رائے ...

Read More »

مافیا

تحریر: آصف علی بھٹی میرا ملک ایسا بدقسمت ملک ہے جہاں طرح طرح کےسینکڑوں مافیاز نظام زندگی میں مضبوطی سے پنجے گاڑے ہوئے ہیں۔ حقیقت ہےکہ ان مافیاز کے ہر دور کے حکمرانوں سے بہت قریبی اور مضبوط تعلقات ہی نہیں ٹھوس بنیادوں پر گٹھ جوڑ ہوتے ہیں۔ مافیاز جس وقت اور جب چاہیں سر اٹھا کر عوام کو بلیک ...

Read More »

پنجاب سے ناانصافی

تحریر: مظہر برلاس برطانوی پارلیمنٹ کے منظور کردہ ایکٹ کے تحت پاکستان اور بھارت کے قیام کا اعلان کر دیا گیا۔ چودہ اور پندرہ اگست کی درمیانی شب علیحدگی ہو گئی مگر پنجابیوں کو دو دن بعد بتایا گیا کہ پنجاب تقسیم ہو گیا ہے۔ ہندوستان اور پاکستان کے قیام کے وقت دراصل پنجاب ہی تقسیم ہوا تھا۔ پنجاب کے ...

Read More »

گندم کا بحران کیوں؟

تحریر: بلال غوری تکلف برطرف، یہ گندم کا بحران نہیں نااہلی کی میراتھون ریس کا میدان ہے۔ سلطنتِ شغلیہ کے امور چلانے کی غرض سے نہایت اہتمام سے جو ’’رنگیلے‘‘جمع کیے گئے تھے، ان کی محنت برگ و بار لارہی ہے اور یہ تماشا اب ختم ہونے والا نہیں۔ 4ماہ پہلے انہی صفحات پر لکھے گئے کالم میں خبردار کیا ...

Read More »

ہمارے شاعر ادیب کیا بیچ رہے ہیں؟

تحریر: یاسر پیرزادہ دوستوں کی محفل میں گپ شپ ہو رہی تھی، کوئی خاص موضوع نہیں تھا، کبھی مذہب پر گفتگو ہونے لگتی تو کبھی کوئی دوست فلسفے کی گتھیاں سمجھانے لگ جاتا، کبھی موسیقی پر بات شروع ہو جاتی تو کبھی کوئی یار ادب پر بحث شروع کر دیتا۔  ایسے میں ہمارے ایک نسبتاً سینئر ادیب کا ذکر چھڑ ...

Read More »

پی ٹی آئی حکومت کا مستقبل؟

تحریر: خلیل احمد نینی تال والا آج کل پی ٹی آئی حکومت کو گرانے کیلئے جھٹکے دیے جا رہے ہیں، ایسا کیوں ہو رہا ہے کہ جو کام مولانا فضل الرحمٰن بغیر اپنے اتحادی دوستوں کی شمولیت کے انجام نہ دے سکے، یکایک ایم کیو ایم کے صرف 7سیٹ والوں (جو 16ماہ تک وزارتوں، عنایتوں کے مزے لوٹتے رہے) کے ...

Read More »

چھبّا انقلابی

تحریر: عطا الحق قاسمی پہلی بات تو یہ ہے کہ اس سلسلے کے دوسرے کالم میں پروف کی خاصی غلطیاں رہ گئی تھیں، امید ہے قارئین نے خود ہی ٹھیک کر لی ہوں گی۔ بہرحال اب آگے چلتے ہیں۔  بات یہ ہے کہ میاں نواز شریف نے اپنی اس جدوجہد میں وہ قربانیاں بھی دی ہیں جو واجب بھی نہ ...

Read More »

این آر او کے 8 ہزار معصوم

تحریر: وجاہت علی خان موزیک فونسیکا جو پاناما سٹی میں قائم ایک آف شور کمپنی ہے، نے واشنگٹن ڈی سی امریکہ میں قائم ایک اچھوتی میڈیا آرگنائزیشن ’’انٹرنیشنل کنسورشیم آف انویسٹی گیٹیو جرنلسٹس‘‘ کو لکھا کہ براہِ مہربانی پاناما پیپرز اسکینڈل کی لیک ہونے والی بعض دستاویزات کو شائع ہونے سے روکا جائے۔ موزیک فونسیکا نے 5مئی 2016ء کو یہ ...

Read More »