میک ڈونلڈ کے سی ای او ملازمت سے برطرف

میک ڈونلڈ کے سی ای او ملازمت سے برطرف

امریکا کی عالمی شہرت یافتہ فاسٹ فوڈ کمپنی میک ڈونلڈ نے کمپنی ملازم سے تعلقات پر سی ای او کو برطرف کردیا۔

برطانوی نشریاتی ادارے کے مطابق میک ڈونلڈ کے چیف ایگزیکٹو آفیسر اسٹیو ایسٹربروک اور کمپنی ملازم کے درمیان باہمی رضا مندی کے تعلقات تھے تاہم انہوں نے کمپنی پالیسی کی خلاف ورزی کی۔

نشریاتی ادارے کی رپورٹ میں بتایا گیا ہےکہ برطانوی بزنس مین اور میک دونلڈ کے سی ای او ایسٹربروک کی جانب سے کمپنی اسٹاف کو ایک ای میل کی گئی ہے جس میں انہوں نے ملازم سے تعلقات کو تسلیم کرتے ہوئے اسے اپنی غلطی قرار دیا ہے۔

ای میل میں اسٹیو نے کہا کہ وہ کمپنی کو اہمیت دیتے ہوئے اس کے بورڈ کے فیصلے سے متفق ہیں اور اب وقت ہے وہ یہاں سے کوچ کریں۔

52 سالہ ایسٹر بروک نے 1993 میں بطور مینیجر لندن میک ڈونلڈ میں شمولیت اختیار کی اور انہیں 22 سال بعد 2015 میں میک ڈونلڈ کا چیف ایگزیکٹو آفیسر بنادیا گیا، میک ڈونلڈ کے سی ای او کے طور پر ایسٹرو بروک کی سالانہ تنخواہ 16 ملین ڈالر تھی۔

ایسٹربروک میک ڈونلڈ کی صدارت اور بورڈ کی ممبر شپ سے بھی دستبردار ہوگئے ہیں جب کہ ان کی جگہ امریکا میں میک ڈونلڈ کے صدر کرس کیمپ زنسکی کو فوری طور پر کمپنی کا سی ای او تعینات کردیا گیا ہے۔

x

Check Also

طالبان قیدیوں کا غیر ملکی پروفیسرز کے ساتھ تبادلہ مؤخر

افغان حکومت کے عہدیدار نے بتایا ہے کہ 2 مغربی مغویوں کا 3 طالبان قیدیوں ...

%d bloggers like this: