dunya today

عدالت میں دھکم پیل،لیگی برہم

مسلم لیگ نواز کے رہنماؤں نے حکومت کو کڑی تنقید کا نشانہ بنایا۔

احتساب عدالت کے باہر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے عظمیٰ بخاری نے کہا اب روایت بن گئی ہے حکومت رکاوٹیں کھڑی کرتی ہیں۔

خاتون کو لانے کے لئے راستہ نہیں دیا جاتا، پولیس کے مرد اہلکار مریم کو لاتے ہیں۔ وہ تین بار گرنے لگی تھیں۔

انہوں نے سوال کیا کہ عمران خان تم اپنی بیٹیوں کو پولیس کے دنگل میں لاؤ گے ؟ ۔

وارننگ دیتی ہوں اگر مریم نواز کے لئے راستہ نہ دیا گیا تو قانون کو ہاتھ میں لے لیں گے۔

سابق گورنر سندھ محمد زبیر نے کہا کہ عمران خان ریاست مدینہ کے دعویدار ہیں جنہوں نے مریم نواز کوکشمیر ریلی پر رفتار کیا۔

نیب کسٹڈی میں سوال جواب سیاسی نہیں ہونے چاہیں سیاسی انجینرنگ ہو رہی ہے ۔

اگر مریم خاموش ہوتی تو کیس نہ ہوتے، حکومت کے خلاف بولنا شروع کیا تو جیل کے اندر کر دیا ۔

نوازشریف اورمریم نواز کی جانب سے پیغام دینا چاہتے ہیں کوئی ڈیل نہیں ہو گی، وہ سیاسی سرگرمیاں ویسے ہی کریں گی۔

نوازشریف کو ویڈیو سکینڈل کے بعد ایک منٹ بھی جیل میں رکھنا ظلم اور زیادتی ہے۔

طلال چودھری بولے کہ مریم نواز کے خلاف رٹ الیکشن کمیشن میں کی گئی، سیاسی عہدے پر پیمرا کیسے پابندی لگا سکتا ہے۔

پیمرا بلیک آؤٹ الیکشن کمیشن کے احکامات کی خلاف ورزی ہے ۔

سچ سن نہیں سکتے کشمیر کی ماؤں کو انصاف تو کیا لے کر دیں گے، ہماری مائیں بہنوں کو سری نگر کی طرح پابندیوں کا سامنا کرنا پڑ رہاہے۔

عمران نیازی سول آمر ہے، اپنی نالائقی چھپانے کےلئے میڈیا کا بلیک آؤٹ کیا ہے، اپوزیشن کو نیب کے گٹھ جوڑ سے پابند سلاسل کر لیا۔

عثمان بزدار سے اگر میٹرو یا ڈینگی پر قابو نہیں ہوتا تو شہباز شریف سے دم کرا لیں، وزیر داخلہ، وزیر قانون اپنا نہیں صرف بزدار آپکا ہے۔

x

Check Also

ستمبر کے پہلے ہفتے میں تعلیمی ادارے کھولنے کا فیصلہ

ستمبر کے پہلے ہفتے میں تعلیمی ادارے کھولنے کا فیصلہ

عالمی وبا کورونا کے باعث بند تعلیمی اداروں کو ستمبر کے پہلے ہفتے میں ایس ...

%d bloggers like this: