این اے 53 سے عمران خان اور دیگر امیدواروں کو بڑا دھچکا

عام انتخابات کے لیے اسلام آباد کے حلقہ این اے 53 سے چیئرمین پی ٹی آئی عمران خان کے کاغذات نامزدگی مسترد کردیے گئے۔ اسی حلقے سے دیگر امیدواروں کے کاغذات بھی مستردقرار پائے۔

ریٹرننگ افسران نے محفوظ شدہ فیصلہ سنادیا۔ کاغذات مسترد کرنے کی وجہ عمران خان کی جانب سے الیکشن کمیشن کے مقرر کردہ ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی ہے۔ریٹرننگ افسر کے مطابق عمران خان کا بیان حلفی نا مکمل ہے۔ بیان میں جائیداد کی مکمل تفصیلات فراہم نہیں کی گئی۔

اسی حلقے سے  دیگر امیدواروں سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی ، سردار مہتاب عباسی اورعائشہ گلالئی کے کاغذات نامزدگی بھی نامکمل بیان حلفی کے باعث مسترد کر دیے گئے۔ شاہد خاقان سےگزشتہ روز 2014 سے 2016 تک  کے ٹیکس گوشواروں کی تفصیلات مانگی گئی تھیں ۔

حلقہ این اے 53 سے ن لیگ کے شاہد خاقان عباسی ،سردار مہتاب عباسی، عمران خان اور پی ٹی آئی کی باغی رکن عائشہ گلالئی نے کاغذات نامزدگی جمع کرائے تھے۔ آخری روز آپہنچنے کے باوجود تاحال کسی ایک بھی امیدوار کے کاغذات نامزدگی منظورنہیں کیےگئے تھے۔

عمران خان،شاہدخاقان عباسی اورعائشہ گلالئی کےکاغذات پراعتراضات کے بعد تینوں کو گزشتہ روز الیکشن کمیشن نے ذاتی حیثیت میں طلب کیاتھا۔ عمران خان خود پیش نہیں ہوئے جبکہ ان کے وکیل بابر اعوان بھی پیش نہیں ہوئے تھے۔بابراعوان کی جگہ معاون وکیل رائے تجمل حسین نے ریٹرننگ آفیسر کو آگاہ کیا کہ بابراعوان لاہور میں ہیں جہاں وہ حلقہ این اے 131 سے متعلق عمران خان کی اسکروٹنی کے معاملے میں پیش ہوں گے۔

کاغذات نامزدگی پر اعتراضات کی سماعت میں سابق چیف جسٹس افتخارچوہدری کی جماعت جسٹس ڈیموکریٹک سے تعلق رکھنے والے  درخواست گزار عبدالوہاب بلوچ کے وکیل نے کہا  کہ امیدوار کیلئے باکردار ہونا لازم ہے لیکن عمران خان سیتا وائٹ کی بچی کے والد ہیں جبکہ عمران خان نے تحریری جواب میں اعتراضات بے بنیاد قرار دے دیے تھے۔

ریٹرننگ افسر نے بھی کاغذات نامزدگی پردائراعتراضات کے بجائے نامکمل بیان حلفی پرفیصلہ سنایا۔

واضح رہے کہ آج جانچ پڑتال کا آخری روزہے۔ الیکشن کمیشن کے ترمیم شدہ انتخابی شیڈول کے مطابق آراوز کے فیصلوں کیخلاف اپیلیں22جون تک دائرہوسکیں گی۔

اپیلیں27جون کونمٹائی جائیں گی اورامیدواروں کی فہرست28جون کوشائع کی جائےگی جب کہ امیدواروں کی حتمی فہرست30جون کوشائع کی جائےگی جس کے بعد 25 جولائی کو عام انتخابات ہوں گے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published.

x

Check Also

گوجرانوالہ پولیس نےبغیراجازت عوامی مقامات پر ویڈیوز بناکر خواتین کرہراساں کرنے کے الزام میں ایک یوٹیوبر کو گرفتار کرلیا۔ ملزم مذاق کے نام پر خواتین کو مختلف باتوں پر ہراساں کرتا تھا اور گزشتہ کئی دنوں سے سوشل میڈیا پر اس پر خوب تنقید کی جارہی تھی اور پولیس سے ایکشن لینے کا مطالبہ کیا جارہا تھا۔ ملزم پر خواتین سے غیراخلاقی حرکات ، اسلحہ کے زورپرگالم گلوچ کرنے کے الزام میں مقدمہ درج کرلیاگیا ہے۔ گوجرانوالہ پولیس نے لاہور کے علاقے محمود بوٹی میں کارروائی کرکے ملزم محمد علی کو گرفتار کرلیا۔ ملزم گکھڑ منڈی کا رہائشی ہے جس نے سوشل میڈیاپر اپنا چینل بنارکھا ہے ۔ ایس پی صدر عبدالوہاب کےمطابق ملزم مزاحیہ ویڈیوز کے ذریعے شہرت حاصل کرنے کے لیے مختلف عوامی مقامات اور پارکس میں بیٹھی خواتین کو ہراساں کرکے ان کی تذلیل کرتا اور ویڈیو سوشل میڈیا پر اپ لوڈ کردیتا تھا۔ پولیس نے ملزم کے خلاف مقامی شہری کی مدعیت میں مقدمہ درج کرکے کارروائی شروع کردی ہے۔

مزاحیہ ویڈیو کے نام پر خواتین کو ہراساں کرنے والا یوٹیوبر گرفتار

گوجرانوالہ پولیس نےبغیراجازت عوامی مقامات پر ویڈیوز بناکر خواتین کرہراساں کرنے کے الزام میں ایک ...

%d bloggers like this: