کالعدم تنظیم نے راؤ انوار پر حملے کی ذمہ داری قبول کرلی

کراچی میں ایس ایس پی ملیر راؤ انوار پر خود کش حملے کی ذمہ داری کالعدم تحریک طالبان نے قبول کرلی ۔ حملے میں راؤ انوار محفوظ رہے تھے، تاہم مقابلے میں 2 دہشت گرد مارے گئے ۔ خود کش حملہ آور کی شناخت اسماعیل آفریدی کے نام سے ہوئی ہے۔
گزشتہ شب ایس ایس پی راؤ انوار اپنے دفتر سے گھر جارہے تھے کہ ملیرلنک روڈ پر خود کش بمبار نے حملہ کر دیا۔ ایس ایس پی راؤ انوار بکتر بند گاڑی میں سوار ہونے کی وجہ سے محفوظ رہے۔
راؤ انوار کا کہنا ہے کے خود کش حملہ آور گاڑی سے ٹکرایا اور پھٹ گیا حملے میں راؤ انوار اور ساتھی اہلکار محفوظ رہے۔
پولیس نے جائے وقوعہ سے2نائن ایم ایم پستول اور 2گولیاں برآمد کرلیں۔
دوسری جانب وزیرداخلہ سندھ سہیل انور سیال نے ایس ایس پی ملیر پر خودکش سے متعلق ڈی آئی جی ایسٹ سے تفصیلی رپورٹ طلب کرلی ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published.

x

Check Also

گوجرانوالہ پولیس نےبغیراجازت عوامی مقامات پر ویڈیوز بناکر خواتین کرہراساں کرنے کے الزام میں ایک یوٹیوبر کو گرفتار کرلیا۔ ملزم مذاق کے نام پر خواتین کو مختلف باتوں پر ہراساں کرتا تھا اور گزشتہ کئی دنوں سے سوشل میڈیا پر اس پر خوب تنقید کی جارہی تھی اور پولیس سے ایکشن لینے کا مطالبہ کیا جارہا تھا۔ ملزم پر خواتین سے غیراخلاقی حرکات ، اسلحہ کے زورپرگالم گلوچ کرنے کے الزام میں مقدمہ درج کرلیاگیا ہے۔ گوجرانوالہ پولیس نے لاہور کے علاقے محمود بوٹی میں کارروائی کرکے ملزم محمد علی کو گرفتار کرلیا۔ ملزم گکھڑ منڈی کا رہائشی ہے جس نے سوشل میڈیاپر اپنا چینل بنارکھا ہے ۔ ایس پی صدر عبدالوہاب کےمطابق ملزم مزاحیہ ویڈیوز کے ذریعے شہرت حاصل کرنے کے لیے مختلف عوامی مقامات اور پارکس میں بیٹھی خواتین کو ہراساں کرکے ان کی تذلیل کرتا اور ویڈیو سوشل میڈیا پر اپ لوڈ کردیتا تھا۔ پولیس نے ملزم کے خلاف مقامی شہری کی مدعیت میں مقدمہ درج کرکے کارروائی شروع کردی ہے۔

مزاحیہ ویڈیو کے نام پر خواتین کو ہراساں کرنے والا یوٹیوبر گرفتار

گوجرانوالہ پولیس نےبغیراجازت عوامی مقامات پر ویڈیوز بناکر خواتین کرہراساں کرنے کے الزام میں ایک ...

%d bloggers like this: