روزانہ صرف تھوڑی سی ورزش سے بڑے مسائل کا حل

روزانہ صرف تھوڑی سی ورزش سے بڑے مسائل کا حل

قبض ایک تکلیف دہ مرض ثابت ہوتا ہے جو اکثر افراد کو لاحق ہوجاتا ہے جس کے بارے میں بات کرنا بھی آسان نہیں ہوا۔

مگر اچھی خبر یہ ہے کہ اس سے نجات حاصل کرنا اتنا بھی مشکل کام نہیں اور معمولی سی جسمانی سرگری آپ کو اس مرض سے بچاسکتی ہے۔

جی ہاں ایسی آسان ورزش جسے کرنا کسی کے لیے بھی مشکل نہیں ہوتا، درحقیقت غذائی نالی کے افعال کو بہتر بناکر خوراک کے ہضم کرنے کے عمل کو تیز کردیتی ہے۔

آپ کو بس کسی بھی قسم کی جسمانی سرگرمی کو معمول بنانے کی ضرورت ہوتی ہے۔

ورزش نظام تنفس اور دل کی دھڑکن کو تیز کرنے کے ساتھ ساتھ مسلز اور اعصاب کو بھی حرکت دیتی ہے جس سے جسمانی افعال زیادہ موثر طریقے سے کام کرنے لگتے ہیں۔

طرز زندگی میں یہ مثبت تبدیلی پانی کے استعمال کو بڑھاتی ہے، غذا بہتر ہوتی ہے اور ذہنی تناﺅ کم ہوتا ہے۔

قبض سے نجات کے لیے 5 منٹ تک عام رفتار سے چہل قدمی کریں جس کے بعد رفتار بڑھا دیں۔

روزانہ آدھے گھنٹے تک یہ تیز چہل قدمی عادت بنالینے سے قبض جیسا مرض دور بھاگ جاتا ہے۔

اگر مسلسل آدھے گھنٹے تک چہل قدمی ممکن نہیں تو دو سے تین بار 10 سے 15 منٹ تک چہل قدمی کی عادت بھی موثر ثابت ہوسکتی ہے۔

جسٹس قاضی فائز عیسیٰ کے خلاف صدارتی ریفرنس

واضح رہے کہ صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی نے سپریم کورٹ کے جسٹس قاضی فائز عیسیٰ اور سندھ ہائی کورٹ کے جج جسٹس کے آغا کے خلاف سپریم جوڈیشل کونسل میں ریفرنس دائر کیا تھا۔

ریفرنس میں دونوں جج صاحبان پر اثاثوں کے حوالے سے مبینہ الزمات عائد کرتے ہوئے سپریم جوڈیشل کونسل سے آرٹیکل 209 کے تحت کارروائی کی استدعا کی گئی تھی۔

سپریم جوڈیشل کونسل کی جانب سے جسٹس قاضی فائز عیسیٰ کو جاری کیا گیا پہلا نوٹس برطانیہ میں اہلیہ اور بچوں کے نام پر موجود جائیدادیں ظاہر نہ کرنے کے حوالے سے صدارتی ریفرنس جاری کیا گیا تھا۔

جسٹس قاضی فائز عیسیٰ کو جاری کیا گیا دوسرا شو کاز نوٹس صدر مملکت عارف علوی کو لکھے گئے خطوط پر لاہور سے تعلق رکھنے والے ایڈووکیٹ وحید شہزاد بٹ کی جانب سے دائر ریفرنس پر جاری کیا گیا تھا۔

ریفرنس دائر کرنے کی خبر کے بعد جسٹس قاضی فائز عیسیٰ نے صدر ڈاکٹر عارف علوی کو خطوط لکھے تھے، پہلے خط میں انہوں نے کہا تھا کہ ذرائع ابلاغ میں آنے والی مختلف خبریں ان کی کردارکشی کا باعث بن رہی ہیں، جس سے منصفانہ ٹرائل میں ان کے قانونی حق کو خطرات کا سامنا ہے۔

جسٹس قاضی فائز عیسیٰ نے صدر مملکت سے یہ درخواست بھی کی تھی کہ اگر ان کے خلاف ریفرنس دائر کیا جاچکا ہے تو اس کی نقل فراہم کردی جائے کیونکہ مخصوص افواہوں کے باعث متوقع قانونی عمل اور منصفانہ ٹرائل میں ان کا قانونی حق متاثر اور عدلیہ کے ادارے کا تشخص مجروح ہو رہا ہے۔

x

Check Also

صحتیابی کے بعد بھی کورونا مریضوں کو نقصان ہوسکتا ہے، ماہرین

صحتیابی کے بعد بھی کورونا مریضوں کو نقصان ہوسکتا ہے، ماہرین

ماہرین صحت کا کہنا ہے کہ صحت یابی کے بعد بھی کورونا وائرس کے مریضوں ...

%d bloggers like this: