پولیو سے متعلق خطرناک ترین ڈویژن

بنوں ڈویژن کو پولیو سے متعلق خطرناک ترین ڈویژن قرار دیا گیا ہے جہاں ایک کمسن بچے میں پولیو وائرس کی تصدیق ہوئی ہے۔

بنوں کے علاقے جانی خیل کے رہائشی 17 ماہ کے بچے میں پولیو وائرس کی تصدیق ہوئی ہے جس کے بعد رواں سال کے ابتدائی ساڑھے 5 ماہ کے دوران ضلع میں پولیو کے کیسز کی تعداد 9 ہوگئی۔

ڈسٹرکٹ ہیلتھ آفیسر طاؤس خان کے مطابق 9 ماہ کے دوران پولیو کیسز کی تعداد 13 ہوگئی ہے جب کہ محکمہ صحت کے مطابق رواں سال خیبرپختونخوا بھر میں پولیو کیسز کی تعداد 18 ہوگئی ہے۔

ڈیرہ اسماعیل خان، بنوں، لکی مروت، ٹانک، شانگلہ، بونیر اور تورغر میں آج سے 3 روزہ انسداد پولیومہم کا آغاز کردیا گیا ہے۔

دوسری جانب قبائلی اضلاع شمالی وزیرستان اور جنوبی وزیرستان میں بھی انسداد پولیو مہم کا آغاز ہوگیا ہے۔

x

Check Also

اسموگ سے بچاؤ کی احتیاطی تدابیر

اسموگ سے بچاؤ کی احتیاطی تدابیر

سردیوں کے آتے ہی پنجاب کے مختلف شہروں خصوصاً لاہور اور گردونواح کے علاقوں میں ...

%d bloggers like this: