میشا شفیع کا علی ظفر پر جنسی ہراساں کرنے کا الزام

پاکستان کی مقبول گلوکارہ، اداکارہ اور ماڈل میشا شفیع نے گلوکار اور اداکار علی ظفر پر انہیں جنسی طور پر ہراساں کرنے کا الزام لگایا ہے۔


ایسا انہوں نے آج اپنے ٹوئٹر اکاؤنٹ پر پوسٹ کی گئی ایک ٹویٹ کے ذریعے کیا۔ یہ ٹویٹ بہت کم وقت میں ایک ہزار سے زیادہ بار شئیر کی جا چکی ہے، اور اس پر آنے والے تبصروں کی تعداد بھی بڑھتی جا رہی ہے۔

میشا شفیع نے لکھا کہ ’میں اس وجہ سے یہ بات شیئر کر رہی ہوں کیوں کہ مجھے لگتا ہے کہ جنسی طور پر ہراساں کیے جانے کے اپنے تجربے کے بارے میں بات کر کے میں خاموشی کی اس روایت کو توڑ سکتی ہوں جو ہمارے معاشرے کا حصہ ہے۔‘

ان کا کہنا تھا کہ ’اس طرح کھل کر بات کرنا آسان نہیں ہے لیکن خاموش رہنا اور بھی زیادہ مشکل ہے۔ میرا ضمیر مجھے اب مزید اس کی اجازت نہیں دیتا۔‘
انھوں نے مزید لکھا، ’میری ہی انڈسٹری میں میرے ساتھ کام کرنے والے ایک ساتھی نے مجھے ایک سے زیادہ بار جنسی طور پر ہراساں کیا ہے: علی ظفر نے۔ یہ سب تب نہیں ہوا جب میں چھوٹی تھی، یا انڈسٹری میں نئی تھی۔ یہ میرے ایک پراعتماد، کامیاب، اور چپ نہ رہنے والی عورت ہونے کے باوجود ہوا۔ یہ میرے ساتھ دو بچوں کی ماں ہونے کے باوجود ہوا!‘

انھوں نے یہ بھی لکھا کہ ’یہ تجربہ میرے اور میرے خاندان کے لیے شدید صدمے کا باعث بنا ہے۔ میں علی کو کئی سالوں سے جانتی ہوں۔ میں نے ان کے ساتھ کام کیا ہے۔ ان کے اس برتاؤ سے میرے یقین کو چوٹ پہنچی ہے۔ اور میں جانتی ہوں کہ میں اکیلی نہیں ہوں۔
آج میں اس خاموشی کو توڑ کر امید کرتی ہوں کہ یہ اس ملک کی دوسری نوجوان خواتین کے لیے ایک مثال بن جائے گی، کہ وہ بھی ایسا کر سکتی ہیں۔ ہمارے پاس اپنی آوازوں کے سوا اور کچھ نہیں، اور وقت آگیا ہے کہ ہم ان کا استعمال کریں۔‘

میشا شفیع ایک مقبول گلوکارہ ہونے کے ساتھ ساتھ فلموں اور ٹی وی ڈراموں میں بھی کام چکی ہیں۔ علی ظفر کی ہی طرح وہ کوک سٹوڈیو کے ساتھ بھی منسلک رہ چکی ہیں۔
علی ظفر گلوکاری کے علاوہ کئی بالی وڈ فلموں میں اداکاری کر چکے ہیں۔ ان کی نئی فلم ’طیفا ان ٹربل‘ بھی آنے والے مہینوں میں ریلیز ہونے والی ہے۔
وہ پاکستان سپر لیگ سمیت کئی اہم اداروں کے سفیر بھی ہیں۔ بی بی سی نے اس بارے میں ان کا ردعمل جاننے کے لیے رابطہ کیا ہے اور ہم اب تک ان کے جواب کے منتظر ہیں۔ علی ظفر

 

Leave a Reply

Your email address will not be published.

x

Check Also

گوجرانوالہ پولیس نےبغیراجازت عوامی مقامات پر ویڈیوز بناکر خواتین کرہراساں کرنے کے الزام میں ایک یوٹیوبر کو گرفتار کرلیا۔ ملزم مذاق کے نام پر خواتین کو مختلف باتوں پر ہراساں کرتا تھا اور گزشتہ کئی دنوں سے سوشل میڈیا پر اس پر خوب تنقید کی جارہی تھی اور پولیس سے ایکشن لینے کا مطالبہ کیا جارہا تھا۔ ملزم پر خواتین سے غیراخلاقی حرکات ، اسلحہ کے زورپرگالم گلوچ کرنے کے الزام میں مقدمہ درج کرلیاگیا ہے۔ گوجرانوالہ پولیس نے لاہور کے علاقے محمود بوٹی میں کارروائی کرکے ملزم محمد علی کو گرفتار کرلیا۔ ملزم گکھڑ منڈی کا رہائشی ہے جس نے سوشل میڈیاپر اپنا چینل بنارکھا ہے ۔ ایس پی صدر عبدالوہاب کےمطابق ملزم مزاحیہ ویڈیوز کے ذریعے شہرت حاصل کرنے کے لیے مختلف عوامی مقامات اور پارکس میں بیٹھی خواتین کو ہراساں کرکے ان کی تذلیل کرتا اور ویڈیو سوشل میڈیا پر اپ لوڈ کردیتا تھا۔ پولیس نے ملزم کے خلاف مقامی شہری کی مدعیت میں مقدمہ درج کرکے کارروائی شروع کردی ہے۔

مزاحیہ ویڈیو کے نام پر خواتین کو ہراساں کرنے والا یوٹیوبر گرفتار

گوجرانوالہ پولیس نےبغیراجازت عوامی مقامات پر ویڈیوز بناکر خواتین کرہراساں کرنے کے الزام میں ایک ...

%d bloggers like this: