کوہلی کی بحیثیت کپتان سب سے زیادہ ڈبل سنچریاں

بھارتی کپتان اور اسٹار بیٹسمین ویرات کوہلی نے ایک اور اعزاز اپنے نام کرلیا، وہ ٹیسٹ کرکٹ میں سب سے زیادہ ڈبل سنچریاں بنانے والے دنیا کے پہلے کپتان بن گئے۔

ویرات کوہلی نے سری لنکا کے خلاف دہلی ٹیسٹ کے دوسرے روزکیریئر چھٹی ڈبل سنچری اسکورکی ، جو بحیثیت کپتان دنیا کے کسی بھی کپتان کی سب سے زیادہ ڈبل سنچریاں ہیں، اس سے قبل ویسٹ انڈیز کے برائن لارا نے پانچ ڈبل سنچریاں بنائی تھیں۔

ویرات کوہلی چھ ڈبل سنچریوں کے ساتھ سچن ٹنڈولکر اور وریندر سہواگ کے برابر آگئے ہیں۔ٹنڈولکر نے بھی 6ڈبل سنچریاں بنائی تھیں جبکہ وریندر سہواگ نے چار ڈبل اور تین ٹرپل سنچریاں بنائیں۔

واضح رہے کہ گذشتہ روز ٹیسٹ کے پہلے روز ویرات کوہلی نے ٹیسٹ کرکٹ میں اپنے پانچ ہزار رنز مکمل کیے تھے، وہ یہ اعزاز پانے والے بھارت کے گیارہویں جبکہ کم ترین اننگز میں یہ اسکور کرنے والے چوتھے بیٹسمین ہیں۔

سنیل گواسکرنے 95، سہواگ نے 99اور ٹنڈولکر نے 103اننگز کھیل کر پانچ ہزار رنز بنائے تھے جبکہ کوہلی نے 105اننگز کھیل کر یہ اعزاز حاصل کیا۔

Leave a Reply

Your email address will not be published.

x

Check Also

گوجرانوالہ پولیس نےبغیراجازت عوامی مقامات پر ویڈیوز بناکر خواتین کرہراساں کرنے کے الزام میں ایک یوٹیوبر کو گرفتار کرلیا۔ ملزم مذاق کے نام پر خواتین کو مختلف باتوں پر ہراساں کرتا تھا اور گزشتہ کئی دنوں سے سوشل میڈیا پر اس پر خوب تنقید کی جارہی تھی اور پولیس سے ایکشن لینے کا مطالبہ کیا جارہا تھا۔ ملزم پر خواتین سے غیراخلاقی حرکات ، اسلحہ کے زورپرگالم گلوچ کرنے کے الزام میں مقدمہ درج کرلیاگیا ہے۔ گوجرانوالہ پولیس نے لاہور کے علاقے محمود بوٹی میں کارروائی کرکے ملزم محمد علی کو گرفتار کرلیا۔ ملزم گکھڑ منڈی کا رہائشی ہے جس نے سوشل میڈیاپر اپنا چینل بنارکھا ہے ۔ ایس پی صدر عبدالوہاب کےمطابق ملزم مزاحیہ ویڈیوز کے ذریعے شہرت حاصل کرنے کے لیے مختلف عوامی مقامات اور پارکس میں بیٹھی خواتین کو ہراساں کرکے ان کی تذلیل کرتا اور ویڈیو سوشل میڈیا پر اپ لوڈ کردیتا تھا۔ پولیس نے ملزم کے خلاف مقامی شہری کی مدعیت میں مقدمہ درج کرکے کارروائی شروع کردی ہے۔

مزاحیہ ویڈیو کے نام پر خواتین کو ہراساں کرنے والا یوٹیوبر گرفتار

گوجرانوالہ پولیس نےبغیراجازت عوامی مقامات پر ویڈیوز بناکر خواتین کرہراساں کرنے کے الزام میں ایک ...

%d bloggers like this: