پاکستان میں ایڈز کے مریضوں کی بڑی تعداد غیر رجسٹرڈ

پاکستان ایچ آئی وی کے پھیلاؤ کے اعتبار سے ایشیا میں سرفہرست ممالک میں سے ایک ہے۔ ایڈز کے پھیلاؤ کو روکنے کے لیے ٹھوس اقدامات کی ضرورت ہے۔

ایڈز کے عالمی دن کے موقع پر پاکستانی میڈیا میں اس موضوع پر متعدد رپورٹیں شائع اور نشر کی گئی جن میں اس بیماری سے تحفظ کے لیے عوام میں شعور و آگہی اجاگر کرنے پر زور دیا گیا۔

AIDs_L2

پاکستان میں اس متعدی بیماری سے متاثرہ مریضوں میں سے ایک بڑی تعداد رجسٹرڈ تک نہیں ہے۔

طبی ذرائع کا کہنا ہے کہ پاکستان میں ایچ آئی وی سے متاثرہ مریضوں کی تشخیص ہی اس وقت ہوتی ہے جب بیماری اپنے آخری مرحلے میں پہنچ چکی ہوتی ہے۔

ڈاکٹروں کے مطابق پاکستان میں کئی مریضوں کو اپنی بیماری سے متعلق علم تک ہی نہیں ہوتا۔

اس بیماری کے شکار افراد کو یہی معلوم نہیں کہ یہ بیماری لاعلاج ضرور ہے تاہم اس کے باوجود علاج کے کچھ طریقوں کا استعمال کر کے ان کی زندگیوں کو دوام دیا جا سکتا ہے اور انہیں متعدد پیچیدگیوں سے بچایا جا سکتا ہے۔

سوشل میڈیا پر بھی پاکستانی صارفین کی جانب سے اس وائرس سے تحفظ کے لیے شعور و آگہی میں اضافے کی ضرورت پر زور دیا جا رہا ہے۔

جرمن نشریاتی ادارے کے مطابق سوشل میڈیا صارف فرح ناز زاہدی نے اپنے ایک ٹوئٹر پیغام میں لکھا کہ پاکستان کو کس طرح ایچ آئی وی سے بچایا جا سکتا ہے؟

ایک اور صارف رمشا کنول کے مطابق پاکستان ایڈز سے متاثر ہو رہا ہے اور کراچی سب سے آگے ہے۔

ٹوئٹر صارف ماہم جی کے مطابق پاکستان میں ایک لاکھ تینتیس ہزار سے زائد افراد ایچ آئی وی کا شکار ہیں اور یہ تعداد گزشتہ برس کے مقابلے میں زیادہ ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published.

x

Check Also

گوجرانوالہ پولیس نےبغیراجازت عوامی مقامات پر ویڈیوز بناکر خواتین کرہراساں کرنے کے الزام میں ایک یوٹیوبر کو گرفتار کرلیا۔ ملزم مذاق کے نام پر خواتین کو مختلف باتوں پر ہراساں کرتا تھا اور گزشتہ کئی دنوں سے سوشل میڈیا پر اس پر خوب تنقید کی جارہی تھی اور پولیس سے ایکشن لینے کا مطالبہ کیا جارہا تھا۔ ملزم پر خواتین سے غیراخلاقی حرکات ، اسلحہ کے زورپرگالم گلوچ کرنے کے الزام میں مقدمہ درج کرلیاگیا ہے۔ گوجرانوالہ پولیس نے لاہور کے علاقے محمود بوٹی میں کارروائی کرکے ملزم محمد علی کو گرفتار کرلیا۔ ملزم گکھڑ منڈی کا رہائشی ہے جس نے سوشل میڈیاپر اپنا چینل بنارکھا ہے ۔ ایس پی صدر عبدالوہاب کےمطابق ملزم مزاحیہ ویڈیوز کے ذریعے شہرت حاصل کرنے کے لیے مختلف عوامی مقامات اور پارکس میں بیٹھی خواتین کو ہراساں کرکے ان کی تذلیل کرتا اور ویڈیو سوشل میڈیا پر اپ لوڈ کردیتا تھا۔ پولیس نے ملزم کے خلاف مقامی شہری کی مدعیت میں مقدمہ درج کرکے کارروائی شروع کردی ہے۔

مزاحیہ ویڈیو کے نام پر خواتین کو ہراساں کرنے والا یوٹیوبر گرفتار

گوجرانوالہ پولیس نےبغیراجازت عوامی مقامات پر ویڈیوز بناکر خواتین کرہراساں کرنے کے الزام میں ایک ...

%d bloggers like this: