بجلی کے ذریعے زخم تیزی سے ٹھیک کرنے والی پٹی متعارف

بجلی کے ذریعے زخم تیزی سے ٹھیک کرنے والی پٹی متعارف

یہ بات ثابت ہو چکی ہے کہ دیرینہ زخم اور ناسور برقی سرگرمی سے جلدی ٹھیک ہو جاتے ہیں، اسی بنا پر امریکی ماہرین نے ہلکی پھلکی پٹی بنائی ہے جو برقی جھماکوں سے زخم کو تیزی سے ٹھیک کرسکتی ہے۔

یونیورسٹی آف وسکانسن میڈیسن کے سائنس دانوں نے یہ باسہولت برقی ڈریسنگ بنائی ہے جو مریض کے گھومنے پھرنے سے بجلی بناتی ہے۔ جدید ڈریسنگ میں بہت باریک نینو جنریٹرز لگائے گئے ہیں اور جیسے جیسے مریض چلتا پھرتا ہے تو نینو جنریٹرز میں بجلی بنتی ہے۔ سانس لیتے ہوئے پسلیوں کے پھیلنے اور سکڑنے سے جو حرکت ہوتی ہے وہ نینو جنریٹر کے لیے بجلی کی تیاری میں بہت ہوتی ہے، اس لیے پٹی کے لیے کسی بیٹری کی ضرورت نہیں ہوتی اور بجلی کی لہروں سے دیرینہ ناسور تیزی سے مندمل ہونا شروع ہو جاتا ہے۔

چوہوں پر کیے گئے تجربات سے ثابت ہوا کہ جو زخم عام حالات میں 12 روز میں درست ہوتے ہیں الیکٹریکل پٹی نے اسے صرف تین دن میں ٹھیک کر دیا۔ ماہرین کے مطابق اس عمل سے زخم کو کوئی نقصان نہیں ہوتا اور کرنٹ محسوس بھی نہیں ہوتا۔ بجلی کی صورت میں فائبرو بلاسٹ خلیات (سیلز) تیزی سے سرگرم ہو کر زخم کو بھرنے میں مدد دیتے ہیں۔ اس طرح بڑے سے بڑا زخم تیزی سے مندمل ہوسکتا ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*

x

Check Also

tik tok اگر آپ کے بچے بھی ٹک ٹاک ایپ استعمال کرتے ہیں تو

اگر آپ کے بچے بھی ٹک ٹاک ایپ استعمال کرتے ہیں تو

سوشل میڈیا کے انقلاب نے جرائم پیشہ لوگوں کو بھی اپنی مکروہ کارروائیوں میں بہت ...