چیف جسٹس پاکستان کا طویل تقریر کا خواتین کے اسکرٹ سے موازنہ

چیف جسٹس ثاقب نثار کے خلاف ریفرنس دائر

دنیا نیوز کے پروگرام نقطہ نظر میں وکیل جہانگیر جدون نے دعوی کیا کہ کوہاٹ کے ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج نے چیف جسٹس ثاقب نثار کے خلاف ریفرنس دائر کر دیا ہے۔

انہوں نے دعوی کیا کہ ریفرنس پندرہ صفحات پر مشتمل ہے۔

وکیل نے دعوی کیا کہ جج کا کہنا تھا سرکاری نوکری ہونے کی وجہ سے وہ ریفرنس کو پبلک نہیں کر سکتے۔

پرورگرام نقطہ نظر میں جب جہانگیر جدون نے ریفرنس کا حوالہ دیا تو سینئر تجزیہ کار مجیب الرحمان شامی نے انہیں ٹوک دیا اور وکیل کو اس موضوع پر بات کرنے سے روک دیا۔

مجیب الرحمان شامی کا کہنا تھا کہ ہم عدلیہ کا احترام کرتے ہیں اور موجودہ چیف جسٹس کے حوالے سے کوئی بات نہیں کریں گے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*

x

Check Also

سپریم کورٹ آف پاکستان میںسی ڈی اے میں ڈیپوٹیشن پر آئے افسران سے متعلق کیس کی سماعت کے دوران چیف جسٹس آف پاکستان میاں ثاقب نثار اور وکیل نعیم بخاری کے درمیان دلچسپ مکالمہ ہوا ہے۔ چیف جسٹس نے کہا کہ ٹی وی پر بیٹھ کر آپ بھی بہت باتیں کرتے ہیں، عدلیہ پر جائز تنقید کرنی چاہیے، جائز تنقید سے ہماری اصلاح ہوگی۔ انہوں نے مزید کہا کہ گزشتہ روز کسی نے چیف جسٹس پاکستان کے کراچی میں لگے اشتہارات کےبارے میں بات کی، ان کو یہ نہیں معلوم میں نے خود وہ اشتہارات ہٹانے کا حکم دے رکھا ہے،اگرمیں آج پابندی لگادوں تو بہت سے لوگوں کا کام بند ہوجائےگا۔ نعیم بخاری نے کہا کہ جوڈیشل مارشل لاء کےبارے میں بہت سی باتیں ہو رہی ہیں۔ چیف جسٹس نے ان سے سوال کیا کہ جوڈیشل این آر او کیا ہوتا ہے؟ میں واضح کردوں، کچھ نہیں آرہا، ملک میں نہ جوڈیشل این آر او اور نہ ہی جوڈیشل مارشل آرہا ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ ملک میں صرف آئین رہے گا، باقی کچھ نہیں ہوگا، ملک میں صرف جمہوریت ہوگی باقی کچھ نہیں رہے گا۔ چیف جسٹس نے یہ بھی کہا کہ اگرمیں یہ کہہ دوں کچھ نہیں آرہا تو کئی لوگوں کے ٹی وی پروگرام بند ہو جائیں گے۔

ٹی وی پر بیٹھ کر آپ بہت باتیں کرتے ہیں، چیف جسٹس

سپریم کورٹ آف پاکستان میںسی ڈی اے میں ڈیپوٹیشن پر آئے افسران سے متعلق کیس کی سماعت کے دوران چیف جسٹس آف پاکستان ...