اگر عمران خان تیسری شادی نہ کرتے تو میں پارٹی میں ہوت

اگر عمران خان تیسری شادی نہ کرتے تو میں پارٹی میں ہوتا

پاکستان تحریک انصاف چھوڑنے والے میاں احمد رضا مانیکا نے پارٹی چھوڑنے کی وجہ بیان کرتے ہوئے کہاہے کہ شادی کرنا ہر آدمی کا ذاتی فعل ہے ، کئی لوگوں اور لیڈروں نے ایک سے زائد شادیاں کی ہیں لیکن ان کے میڈیا ٹرائل نہیں ہوئے لیکن عمران خان کا بنا ہے ، یہ ان کا اپنا فیصلہ ہے لیکن عام آدمی ان کے فیصلے سے ناخوش ہے ، پاکپتن صوفیا کرام کی نگری ہے یہاں پیروں کا بہت احترام ہوتاہے اور جو لوگ پیر کے احترام میں اپنی حدود پھلانگتے ہیں ان کو لوگ یہاں اچھا نہیں سمجھتے ہیں ۔
نجی ٹی وی جیونیوز کو خصوصی انٹرویو دیتے ہوئے احمد رضا مانیکا کا کہناتھا کہ اگر عمران خان تیسری شادی نہ کرتے تو میں پارٹی میں ہوتا کیونکہ میں نے پارٹی کیلئے بہت کام کیاہے ۔ انہوں نے کہا کہ میں نے 2013 میں پارٹی جوائن کی تھی اور مجھے الیکشن میں 56 ہزار سے زائد ووٹ ملے ، میں جماعت کے ساتھ مخلص ہو کر چلتا رہا ہوں ، ہم نے پاکپتن کے ضلع کے چیئرمین کا الیکشن جیتاہے لیکن عمران خان نے ہمارے پر کبھی توجہ نہیں دی ، میں یہاں پر پارٹی کا ڈسٹرکٹ پریذیڈنٹ بھی ہوں ، وہ یہاں آتے تھے اور ہم سے ملے بغیر ہی چلے جاتے تھے اور کبھی سیاسی حالات پر ہم سے کوئی گفتگو نہیں کی ۔ ان کا کہناتھا کہ ورکرز مجھ سے پوچھتے تھے کہ عمران خان آئے اور ملے بغیر ہی چلے گئے ہیں جس پر مجھے شرمندگی محسوس ہو تی تھی ۔ان کا کہناتھا کہ عمران خان میں کچھ عرصہ میں بہت تبدیلی آئی ہے جب جسٹس وجیہہ الدین نے پارٹی چھوڑنے کا اعلان کیا تو وہ بھی اس وقت انہوں نے بھی یہی کہا تھا کہ مجھے پرانا والا عمران خان چاہیے ۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*

x

Check Also

دُنیا کا سب سے بڑا سائنسدان گرفتار

چنیوٹ میں دنیا کا سب سے بڑا ڈاکٹر اور سائنسدان ہونے کا دعویٰ کرنے والا ...