سنیما کا ٹکٹ 200 روپے۔۔۔ایسا ہوجائے تو کیا بات ہے؟

دنیا بھر کی فلمی صنعت میں جہاں ہالی ووڈ اور بالی ووڈ کا راج ہے وہاں لالی ووڈ، ابھی صرف گہری نیند سے بیدار ہورہا ہے، ملک میں اکا دکا اچھی فلمیں بھی دیکھنے میں آرہی ہیں تاہم ایسے وقت میں حکومت کی جانب سے سنیما کا ٹکٹ 200 روپے رکھنے کا اعلان خوش آئند ہے۔
ملک میں اول تو جدید سنیما خاطر خواہ تعداد میں نہیں اور ہیں بھی تو اس قدر مہنگے کہ اس کے ٹکٹ غریب تو کیا ایک متوسط طبقے کی فیملی کی رینج سے بھی باہر ہیں۔

جدید سنیماؤں میں کم از کم ٹکٹ500روپے سے لے کر 1000 روپے تک کا ہے اور یہ قیمت اتنی زیادہ ہے کہ ایک متوسط طبقے کی پوری فیملی کا ایک ساتھ جاکر فلم دیکھنا یقیناً ’لوہے کے چنے چبانا‘ جیسا مشکل کام ہے کیونکہ اگر میاں بیوی اور بچوں سمیت 7 افراد پر مشتمل کنبہ سنیما گھر پہنچ بھی جائے تو اس فلم کے ٹکٹس 3500 روپے کے بنیں گے جبکہ آنے جانے کے کرائے اور بچوں کے لیے انٹرول میں ریفریشمنٹ سمیت یہ قیمت لگ بھگ 4500 روپے کے قریب بنے گی اور یہ رقم اتنی زیادہ ہے کہ اگر گھر کے کفیل کی تنخواہ بیس، پچیس ہزار بھی ہو تو اس کے لیے فلم دیکھنے کا مطلب پورا مہینہ گن گن کر گزارنا اورحقیقی معنوں میں ’چنے چباکر‘ گزارنا کرنے کے مترداف ہوگا۔
اس صورتحال میں وزیر مملکت برائے اطلاعات و نشریات مریم اورنگزیب کا 200 روپے ٹکٹ کرنے کا اعلان خوش آئند ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*

x

Check Also

الیکشن دو ہزار اٹھارہ کے لیے تحریک انصاف نے تاریخ میں پہلی مرتبہ پی کے دس اپر دیر سے خاتون حمیدہ شاہد کو نامزد کردیا۔ رات گئے جاری کی گئی تحریک انصاف کی نئی لسٹ کےمطابق، پی کے دس اپر دیر ون سے خاتون امیدوار حمیدہ شاہد کو نامزد کردیا گیا ہے۔ اس سے قبل لسٹ میں نواب علی خان کا نام شامل کیا گیا تھا۔ اس سے قبل، خواتین کو یہاں سے ووٹ ڈالنے کی بھی اجازت نہیں تھی۔ حمیدہ شاہد تاریخ میں پی کے دس کے حلقے سے پہلی خاتون ہوں گی جو الیکشن لڑیں گی۔ حمیدہ شاہد کا عزم ہے کہ دیر کے مردوں کے معاشرے میں خواتین کے حقوق کی آواز اٹھاتی رہیں گی۔ اپنے اوپر اعتماد کرنے پر انہوں نے جماعت اور عمران خان کا شکریہ ادا کیا۔ اور عزم کا اعادہ کیا کہ وہ تحریک انصاف کی توقعات پر پورا اتریں گی اور دیر کے پسماندہ طبقات کے لیے کام کریں گی۔

25 جولائی کو پنجاب کے کن حلقوں میں کانٹے دار مقابلہ دیکھنے کو ملے گا؟

عام انتخابات 2018 کی گہما گہمی ہے، ہر طرف سیاسی نعروں، بینرز، سلوگن اور پارٹی پرچموں کی بہار نظر آرہی ہے۔ ویسے تو ...